CLINICAL FORM PLEASE FILL

CLINICAL FORM PLEASE FILL
ہیپاٹائٹس مخصوص علاج: تازہ سفید مشروم 10 گرام روزانہ تین بار کھائیں 100گرام تازہ انگورکوآدھا لیٹر پانی میں ابال کرجب نصف پانی سے کم رہ جائے روزانہ اسکو تین دفعہ کر کے پیئں ہیپاٹائٹس میں غذائی ٹانک جڑی بوٹیاں 1جنسینگ2 ایلفالفا3 رئمیز اوفئکانا 4 اچاناکیا پرپوریا ہیپاٹائٹس سی کے مریض کے لۓ اکسیر ہو میو پیتھک اور غذا ئی علاج Carduus Marianus کآردووس مآریانوس Ceanothus کینوتوس Chenanthusچاننٹہوس Chelidonium چالادونیوم تازہ جڑی بوٹیاں اور سبزیاں گاجر؛ادرک کی جڑ؛لال پیاج؛لہسن؛دھنیا؛اجمود؛گوبھی (سرخ اور جامنی)؛ چقندر ؛پودینہ؛ایلو ویرا کا پانی پھل سیب؛اورینج ؛ لائم؛نیبو؛ مصالحہ جات لونگ؛ تلسی؛اجوائن؛ٹکسال

Monday, February 11, 2013

میڈیٹیشن (مراقبہ )کے طبی فوائد

                     
ﭘﺮﻧﺴﭙﻞ اﻧﻮﯾﺴﭩﯽ ﮔﯿﭩﺮ ﭘﺮوﻓﯿﺴﺮ ﺳﺎرﯾﻨﺎ ﺟﮯ ﮔﺮوس واﻟﮉ ﻧﮯ ﮐﮩﺎ ﮨﮯ ﮐہ ﻣﺮاﻗﺒہ ﮐﯽ ﯾہ ﺗﮑﻨﯿﮏ ﻣﺸﮑﻞ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﻮ اﻧﺴﺎن ﮐﻮ ﺳﯿﮑﮭﻨﮯ ﮐﮯ ﻋﻤﻞ ﮐﯽ ﭘﮩﭽﺎن ﮐﺮاﺗﯽ ﮨﯿﮟ۔ ﯾہ ﺗﮑﻨﯿﮏ ﺗﻮﺟہ ﻧﮩﯿﮟ ﺑﻠﮑہ دﻣﺎغ ﮐﻮ ﮐﻨﭩﺮول ﮐﺮﻧﮯ ﮐﺎ ﻃﺮﯾﻘہ اور ﻣﺸﻖ ﮐﺮاﺗﯽ ﮨﯿﮟ ﺟﺲ ﺳﮯ وﮦ اﯾﮏ ﻣﻨﻈﻢ ﺣﺎﻟﺖ ﻣﯿﮟ آﺟﺎﺗﺎ ﮨﮯ۔ ﺧﺎص ﻃﻮر ﭘﺮ ﺗﺸﻮﯾﺶ، ڈﭘﺮﯾﺸﻦ اور ﺑﭽﻮں ﻣﯿﮟ ﺗﻮﺟہ ﮐﯽ ﮐﻤﯽ ﮐﮯ
ﻣﺴﺌﻠہ ﻣﯿﮟ ﯾہ ﺑﮩﺖ ﮐﺎرﮔﺮ ﺛﺎﺑﺖ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ۔ اﻧﮩﻮں ﻧﮯ دﻣﺎﻏﯽ ﺑﯿﻤﺎری “اے ڈی اﯾﭻ ڈی” ﺳﮯ ﻣﮑﻤﻞ اﻓﺎﻗﮯ ﮐﯿﻠﺌﮯ ان ﺗﮑﻨﯿﮑﺲ ﮐﻮ ﻣﺠﺮب ﻗﺮار
دﯾﺎ ﮨﮯ ﺟﻦ ﮐﻮ ﺳﺎﺋﯿﮑﺎﭨﺮی ﺟﺮﯾﺪے “ﻣﺎﺋﻨﮉ اﯾﻨﮉ ﺑﺮﯾﻦ” ﻧﮯ اﭘﻨﯽ ﺗﺎزﮦ اﺷﺎﻋﺖ ﻣﯿﮟ ﺟﮕہ دی ﮨﮯ

اے ڈی ایچ ڈی)اٹینشن ڈیفیسٹ، ہائپر اکٹویٹی ڈس آرڈرAttention Deficit, Hyperactivity Disorder (ADHD)
ذیل کا متن اٹینشن ڈیفیسٹ، 'ہائپرایکٹویٹی ڈس آرڈر (اے ڈی ایچ ڈی) - والدین اور نگرانوں کے لئے عملی رہنما' نامی اشاعت سے ماخوذ ہے جو کلی طور پر ذیل میں دستیاب ہے۔
ایک وقت یا کسی دیگر وقت میں، زیادہ تر بچے کمزور ارتکاز کا مظاہرہ کرتے ہیں، حد سے زیادہ تصنع آمیز ہوجاتے ہیں، یا بغیر سوچے سمجھے کام کرتے ہیں۔ تاہم، کچھ بچے ایسے ہوتے ہیں جو عدم توجہ، بیش تناؤ اور اضطراریت کے ساتھ مخصوص اور نمایاں دشواریوں کا مظاہرہ کرتے ہیں، جس کا اثر ان کی آموزش اور برتاؤ پر ہوتا ہے اور جس پر انہیں خود قابو پانے کی اہلیت محسوس نہیں ہوتی ہے۔ یہ دشواریاں ایسی نہیں ہوتی ہیں کہ انہیں معمول کے اثرات کے طور پر بیان کیا جائے جیسے کمپیوٹر گیمز، بہت زیادہ ٹی وی دیکھنا، ناقص انتظام، کھانا اور اسی طرح کی چیزیں۔
ایسے بچوں کو ابھی اٹینشن ڈیفیسٹ ہائپرایکٹویٹی ڈس آرڈر (اے ڈی ایچ ڈی - کبھی کبھی اسے اے ڈی ڈی بھی کہا جاتا ہے) کے حامل کے نام سے موسوم کیا جاتا ہے۔ 
ے ڈی ایچ ڈی کیا ہے
اے ڈی ایچ ڈی والے بچے ذیل میں سے کچھ یا تمام میں مخصوص دشواریوں کا مظاہرہ کرتے ہیں:
عدم توجہ (جیسے "زور نہیں دے سکتے؛ لگتا ہے کہ سنتے ہی نہیں؛ لگتا ہے کہ ہوائی قلعے بنا رہے ہیں؛ بہت آسانی سے توجہ بھٹک جاتی ہے؛ توجہ مرکوز نہیں کرسکتے"
بیش تناؤ جیسے "ہمیشہ چلتا رہتا ہے؛ مستقل ہوکر بیٹھ نہیں سکتا۔"
اضطراریت (جیسے "سوچنے سے پہلے ہی عمل کرتا ہے؛ خود کو چیخنے چلّانے یا کھینچ کر مارنے سے روک نہیں سکتا"۔

بہت سے، یا درحقیقت زیادہ تر، بچے یقینا اپنی زندگی میں کسی نہ کسی وقت ان چیزوں میں دشواریوں کا اظہار ضرور کریں گے۔ اے ڈی ایچ ڈی والوں کے لئے تفریق یہ ہے کہ یہ برتاؤ لازمی طور سے:

چھ ماہ سے زیادہ عرصے تک موجود رہیں گے؛
اسی عمر کے بچوں کے لئے عمومی پیش رفت کے ساتھ مداخلت کرنے کے لئے کافی شدید ہوگا؛
نشوو نما کی سطح یا دیگر دشواری / عارضہ کے ذریعہ بیان نہیں کیا جاسکتا ہے؛ اور
دیگر عوامل جیسے "کاہلی، نیند میں کمی؛ بہت زیادہ ٹی وی؛ ویڈیوز؛ غذا کی زیادتی کے ذریعہ بیان نہیں کیا جاسکتا ہے۔

ہیومیوپیتھک ڈاکڑ فتحیاب علی سید بی ایس سی (غذااورغذائیت)
ڈی ایچ ایم ایس[ 1974 لاہور]آر ایم پی رجسڑیشن 9027
نیشنل کونسل فار ہومیوپیتھی حکومت پاکستان
www.nutritionisthomeopath.blogspot.com

No comments:

Post a Comment